Home / سیاست / تبصرہ / حضرت امام محمد تقی علیہ السلام کی المناک شہادت

حضرت امام محمد تقی علیہ السلام کی المناک شہادت


0001_Title2فرزند رسول حضرت امام محمدتقی علیہ السلام کی المناک شہادت کے غم میں پوری دنیا سوگوار ہے-9013.01 Taqi 02Sep16

فرزند رسول حضرت امام محمد تقی علیہ السلام کی تاریخ شہادت مورخین نے آخر ذیقعدہ لکھی ہے چنانچہ آج تیس ذیقعدہ کو پورے عالم اسلام میں آپ کی شہادت کا غم منایا جا رIT_001ہا ہے- اسی مناسبت سے پورےعالم اسلام میں مجالس عزا اور نوحہ و ماتم کا سلسلہ  شروع ھے۔ ان دنوں خاص طور پر زائرین  دنیا کے مختلف علاقوں سے   مشہد مقدس میں آپ کے والد بزرگوار حضرت امام رIT_002ضا علیہ السلام اور قم المقدسہ میں آپ کی پھوپھی حضرت معصومہ سلام اللہ علیھا  کے مزار پر اور عراق میں کاظمین ان کے  مزار پر  اس المناک شہادت پر پرسہ پیش کر رہے ہیں-

نویں امام اور آسمان عصمت و طہارت کے گیارھویں درخشاں ستارے حضرت امام IT_004محمد تقی علیہ السلام  220 ہجری قمری کو حکام وقت کے جور و ستم کے تحت شہید ہوگئے اور امامت کی سنگین ذمہ داری آپ کے فرزند حضرت امام علی نقی علیہ السلام کے کندھوں پر آن پڑی۔IT_003

آپ کا اسم گرامی محمد، ابوجعفر کنیت، اور تقی علیہ السّلام  وجوّاد علیہ السّلام دونوں مشہور لقب تھے- اسی لیے آپ امام محمد تقی علیہ السّلام کے نام سے IT_005یاد کیے جاتے ہیں .چونکہ آپ سے پہلے حضرت امام محمد باقر علیہ السّلام کی کنیت ابو جعفر ہوچکی تھی اس لیے کتابوں میں آپ کو ابو جعفر ثانی اور دوسرے لقب کو سامنے رکھ کر حضرت IT_006جوّاد بھی کہا جاتا ہے .

آپ کے والد بزرگوار حضرت امام رضا علیہ السّلام تھے اور والدہ معظمہ کا نام جناب سبیکہ یا سکینہ علیہ السّلام تھا .حضرت امام محمد تقی علیہ السّلام کو کمسنی IT_007ہی میں مصائب اور پریشانیوں کا مقابلہ کرنے کے لیے تیارہوجانا پڑا .آپ کو بہت کم ہی اطمینان اورسکون کے لمحات میں باپ کی محبت ، شفقت اورتربیت کے سائے میں زندگی گزارنے کا موقع مل IT_008سکا .

آپ کی عمرمبارک صرف پانچ برس تھی جب حضرت امام رضا علیہ السّلام مدینہ سے 200 ھجری میں خراسان کی طرف سفرکرنے پرمجبور ہوئے تو پھرزندگی میں ملاقاتIT_009 کا موقع نہ ملا امام محمد تقی علیہ السّلام سے جدا ہونے کے تیسرے سال یعنی 203 ہجری میں امام رضا علیہ السّلام کی مشہد جوارح طوس ایران کے صوبہ خراسان میں  شھادت ہوگئی .

دنیا سمجھتی ہوگی کہ امام محمدتقی علیہ السّلام کے لیے علمی وعملی بلندیوں تک پہنچنے کا کوئی ذریعہ نہیں رہا اس لیے اب حضرت امام جعفرصادق علیہ السّلامIMG_1171 کی علمی مسند شاید خالی نظر آئے مگر اس وقت خلق خدا کی حیرت کی انتہا نہ رہی جب اس کمسن بچے کو تھوڑے دن بعد مامون کے پہلو میں بیٹھ کر بڑے بڑے علما سے فقہ حدیث تفسیراورکلام پرمناظرے کرتے اور سب کو قائل ہوتے ہوئے دیکھا گیا.
IMG_1177جب امام رضا علیہ السّلام کو مامون نے ولی عہد بنایا اور اس کی سیاست اس بات کی مقتضی ہوئی کہ بنی عباس کو چھوڑ کر بنی فاطمہ سے روابط قائم کئے جائیں اور اس طرح شیعیان اہل بیت علیہ السّلام کو اپنی جانب مائل کیا جائے تو اس نے ضرورت محسوس کی کہ خلوص واتحاد کے مظاہرے کے لیے علاوہ اسIMG_1179 قدیم رشتے کے جو ہاشمی خاندان میں سے ہونے کی وجہ سے ہے ، کچھ جدید رشتوں کی بنیاد بھی قائم کردی جائے چنانچہ اسی جلسہ میں جہاں ولی عہدی کی رسم ادا کی گئی .اس نے اپنی بہن ام حبیبہ کاعقد امام رضا علیہ السّلام کے ساتھ کیا  اور اپنی بیٹی ام الفضل کی نسبت کا امام محمد تقی علیہ السّلام کے ساتھ اعلان کیا .IMG_1180

امام محمد تقی علیہ السّلام اخلاق واوصاف میں انسانیت کی اس بلندی پر تھے جس کی تکمیل، رسول اور آل رسول (ص) کا طرۂ امتیاز تھی کہ ہر ایک سے جھک کر ملنا . ضرورت مندوں کی حاجت روائی کرنا مساوات اور سادگی کو ہر حالت میں پیش نظر رکھنا. غربا کی پوشیدہ طور پر خبرگیری کرنا اوردوستوں کKazmain_01ے علاوہ دشمنوں تک سے اچھا سلوک کرتے رہنا ، مہمانوں کی خاطر داری میں انہماک اورعلمی اورمذہبی پیاسوں کے لیے چشمہ فیض جاری رکھنا آپ کی سیرت زندگی کے نمایاں پہلو تھے.

نویں امام (علیہ Kazmain_04السلام) اپنی پوری امامت کے دوران دو عباسی خلیفہ یعنی مامون (١٩٣ تا ٢١٨) اور معتصم (٢١٨ تا ٢٢٧) سے روبرو رہے اور ان دونوں نے آپ کو زبردستی مدینہ سے بغداد بلایا اور مامون نے جس طریقہ سے امام رضا (علیہ السلام) کو اپنے زیر نظر رکھا اسی طرح امام جواد (ع) کو بھی اپنے زیر نظر رکھا ۔

 29ذی القعدہ 220ھ میں پچیس سال کی عمر میں معتصم نے آپ کو زہر سے شہید کر دیا اور آپ اپنے جدِ بزرگوار حضرت امام موسیٰ کاظم  (ع) کے پاس کاظمین میں دفن ہوئے-

About admin

Check Also

کل بھوشن کی بیوی 2ماہ سے لا پتہ

پاکستان میں سزائے موت کے منتظر بھارتی خفیہ ادارے ’’را‘‘کے ایجنٹ کلبھوشن کی بیوی جسے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Translate »
error: Content is protected !!