سابق امیر قطر کا وہابیت سے بیزاری کا اعلان

0
27

Shafaqna IRنافذہ ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق، سابق امیر قطر حمد بن خلیفہ آل ثانی نے مسلم علماء کے وفد سے ملاقات میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے بیانات پر تشویش کا اظہار کیا۔

 02017.01 Qatar 08Feb17سابق امیر قطر نے کہا کہ اسلام اور مسلمانوں کے تعلق سے پوری دنیا کے تجزیہ کاروں پر عجیب فکر نے غلبہ کررکھا ہے جو نہایت خطرناک ہے۔ وہابیت ایسا مذہب ہے جو صرف سعودی عرب سے مختص ہے مگر لوگ اسے تمام خلیجی ممالک سے منسوب کرتے ہیں۔ میں اعلان کرنا چاہتا ہوں کہ ہم سلفی سنی ہیں، وہابی نہیں ہیں۔ شیخ حمد بن خلیفہ نے کہا: قطر سمیت دنیا بھر کے مسلمان اس وقت خطرناک حالات سے گزرہے ہیں۔

 انہوں نے کہا: امریکی صدر کے نظریات مشرق وسطیٰ کے تعلق سے گرچہ بہت سے مسائل میں ہم سے ہم آہنگ ہیں مگر وہ جس طرح کی اصطلاحیں استعمال کرتے ہیں ہمارے لیے باعث تشویش ہے۔ وہ مسلمانوں کے لیے اسلامی انتہاپسندی اور اسلامی دہشتگردی کی تعبیر استعمال کرتے ہیں کیونکہ وہ تمام مسلمانوں کو دہشتگردی کے آئینے میں دیکھتے ہیں جب کہ اسلام میں بھی مختلف فرقے اور مسلک ہیں۔

 سابق امیر قطر نے کہا کہ قطر کی عوام ہمیشہ انتہاپسندی سے دور رہی ہیں۔ ہم پوری دنیا میں تکفیریت کی مذمت کرتے ہیں۔