Home / دھشت گردی / سعودی سفیر عراق میں شیعہ سنی فسادات کو کرانا چاہتے ہیں، واپس بلایا جائے: عراق

سعودی سفیر عراق میں شیعہ سنی فسادات کو کرانا چاہتے ہیں، واپس بلایا جائے: عراق

Shafaqna IR29-اگست16: عراقی وزارت خارجہ کے ترجمان احمد جمال نے ایک امریکی خبر رساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ عراق کی حکومت نے سعودی عرب کو باضابطہ ایک درخواست دی ہے ۔جس میں کہا گیا ہے کہ بغداد میں ان کے تعینات سفیر ثمر الشعبان کی سرگرمیوں سے عراق میں شیعہ سنی فسادات پھوٹنے کا خطرہ ہے۔

لہذا انہیں فوراً تبدیل کر دیا جائے۔ ترجمان نے کہا کہ گزشتہ دنوں سعودی سفیر نے عراق میں ایرانی مداخلت کے حوالے سے حقائق کے منافی گفتگو کی جس کی وجہ سے عراقی عوام میں غم و غصہ پایا جاتا ہے اور حکومت پر دباؤ بڑھتا جا رہا تھا کہ ہم باضابطہ سعودی عرب سے درخواست کریں کہ وہ اپنا سفیر تبدیل کرے۔8152.01 SaudiEmbassado 29Aug16

انہوں نے کہا کہ ہم کسی کو بھی اس بات کی اجازت نہیں دینگے کہ وہ ہمارے اندرونی معاملات میں مداخلت کرے۔ کولمبیا یونیورسٹی سے منسلک ڈاکٹر اعظم اخوند نے “دنیا نیوز” نارتھ امریکہ کے نمائندے ندیم منظور سلہری سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب موجودہ صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے اپنا سفیر واپس بلا لے گا۔ اگر اس نے تاخیری حربہ استعمال کیا تو پھر عراق کی حکومت سعودی سفیر ثمر الشعبان کو بلیک لیسٹ کرتے ہوئے فورا عراق چھوڑنے کا کہہ سکتی ہے۔ عالمی ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ ثمر الشعبان ایرانی رجیم کے شروع سے ہی خلاف ہیں۔

About admin

Check Also

کل بھوشن کی بیوی 2ماہ سے لا پتہ

پاکستان میں سزائے موت کے منتظر بھارتی خفیہ ادارے ’’را‘‘کے ایجنٹ کلبھوشن کی بیوی جسے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Translate »
error: Content is protected !!