Home / دھشت گردی / سلامتی کونسل اجلاس:امریکی میزائل حملے جارحیت قرار

سلامتی کونسل اجلاس:امریکی میزائل حملے جارحیت قرار

Dawn Newsنیویارک: اقوام متحدہ (یو این) میں روس کے نائب سفیر ولادی میر سفکرونوف نے کہا ہے کہ امریکا کی جانب سے شام میں کیے گئے میزائل حملے عالمی قوانین کی خلاف ورزی اور جارحیت ہیں۔

04013.01 USAgressıon 08Apr17امریکا کی جانب سے شام کے الشعیرات ایئربیس پر 59 ٹام ہاک کروز کے 60 میزائل داغے گئے، جن میں کم سے کم 4 فوجی ہلاک ہوگئے۔امریکا نے اس ایئربیس کو نشانہ بنایا جہاں سے 4 اپریل کو شامی شہریوں پر مہلک گیس سے حملہ کیا گیا تھا۔

امریکی میزائل حملوں کے بعد اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس طلب کیا گیا، جس میں روسی نائب سفیر نے امریکا کے اقدامات کو جارحیت قرار دیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) نے اپنی خبر میں بتایا کہ اقوام متحدہ میں روس کے نائب سفیر ولادی میر سفکرونوف نے سلامتی کونسل کے ہنگامی اجلاس میں خطاب کے دوران شامی حکومت کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ ماسکو شروع سے ہی کھلے عام شام کی حمایت کرتا آیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: ٹرمپ حکومت کا شام پر پہلا حملہ

روسی نائب سفیر نے واضح کیا کہ ماسکو بشارالاسد کی حمایت جاری رکھے گا۔ولادی میر سفکرونوف نے کہا کہ شام پر امریکی میزائل حملوں سے ثابت ہوتا ہے کہ امریکا نے حملوں کی تیاری پہلے سے کر رکھی تھی۔ انہوں نے امریکی میزائل حملوں کو عالمی قوانین کی خلاف ورزی اور جارحیت قرار دیا۔

سلامتی کونسل کے اجلاس میں ہی اقوام متحدہ میں امریکی سفیر نکی ہیلی نے کہا کہ گزشتہ ہفتے شام میں ہونے والے کیمیکل حملوں کی ذمہ دار شامی حکومت ہے، جب کہ بشار الاسد کو بچانے کے ذمہ دار روس، ترکی اور ایران ہیں۔

نکی ہیلی نے کہا کہ روس جان بوجھ کر شام میں کیمیکل ہتھیاروں کو ختم کرنے کی کوشش نہیں کر رہا، خیال کیا جا رہا ہے کہ ماسکو 2013 میں واشنگٹن کے ساتھ کیے گئے معاہدے کی خلاف ورزی کر رہا ہے۔ امریکی سفیر نے بتایا کہ ممکن ہے کہ روس کی حکومت ماسکو کو یہ کہ کر بے وقوف بنا رہی ہو کہ ان کے پاس کوئی کیمیکل ہتھیار نہیں۔

نکی ہیلی نے کہا کہ دنیا شام میں اپنی 04013.02 USAgressıon 08Apr17ذمہ داریاں نبھانے کے حوالے سے روس کا انتظار کر رہی ہے۔علاوہ ازیں سلامتی کونسل کے اجلاس میں برطانیہ سمیت دیگر ممالک کے سفیروں نے بھی شام پر گفتگو کی۔

دوسری جانب عالمی برادری نے جہاں شام میں کیمیکل حملوں کی مذمت کی، وہیں دنیا کے مختلف ممالک نے شام پر امریکی میزائل حملوں کی بھی مذمت کی۔امریکی میزائل حملے شام میں کیمیکل حملوں کے 4 دن بعد کیے گئے۔

شام کے قصبے ادلب میں 4 اپریل کو ہونے والے کیمیکل حملوں میں 20 بچوں سمیت 70 افراد ہلاک ہوئے تھے، جن میں سے 22 افراد کا تعلق ایک ہی خاندان سے تھا۔

About admin

Check Also

کل بھوشن کی بیوی 2ماہ سے لا پتہ

پاکستان میں سزائے موت کے منتظر بھارتی خفیہ ادارے ’’را‘‘کے ایجنٹ کلبھوشن کی بیوی جسے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Translate »
error: Content is protected !!