Home / دھشت گردی / پاناما گیٹ کیس: شریف خاندان کے وکلاء پھر تبدیل

پاناما گیٹ کیس: شریف خاندان کے وکلاء پھر تبدیل

dawn-newsاسلام آباد: پاناما کیس میں شریف خاندان کی سپریم کورٹ میں نمائندگی کرنے والے وکلاء پھر تبدیل ہوگئے، کیس میں وزیر اعظم نواز شریف کی پیروی سابق اٹارنی جنرل سلمان اسلم بٹ کے بجائے اب ایڈووکیٹ مخدوم علی خان کریں گے۔

01010-01-panama-03jan17یاد رہے کہ پاناما لیکس پر درخواستوں کی سماعت کے لیے نئے لارجر بینچ کے قیام کے بعد کیس کی دوبارہ سماعت 4 جنوری سے شروع ہوگی۔

01010-02-panama-03jan17نئے لارجر بینچ کی جانب سے سماعت کیے جانے سے قبل ہی شریف خاندان کے وکلاء میں تبدیلیاں سامنے آئی ہیں۔

وزیراعظم نوازشریف کے ساتھ ساتھ ان کے بیٹوں حسن نواز اور حسین نواز کے وکلاء بھی تبدیل ہوگئے ہیں، ایڈووکیٹ اکرم شیخ کے بجائے اب ان دونوں کی پیروی سلمان اکرم راجا کریں گے۔

دوسری جانب نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز کی پیروی سینئر وکیل شاہد حامد کریں گے۔

قبل ازیں پاناما کیس میں وزیراعظم اور ان کے بچوں کی پیروی سابق اٹارنی جنرل سلمان اسلم بٹ کررہے تھے، 14 نومبر کو وزیراعظم کے بچوں نے وکیل کی تبدیلی کی درخواست دیتے ہوئے سینئر قانون دان بیرسٹر اکرم شیخ کی خدمات حاصل کرنے کی استدعا کی تھی۔

یہ بھی پڑھیں: پاناما لیکس پر لارجر بینچ تشکیل، نئے چیف جسٹس شامل نہیں

یاد رہے کہ 31 دسمبر کو سپریم کورٹ کے نو منتخب چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے حلف اٹھانے کے بعد سپریم کورٹ میں جاری پاناما لیکس پر درخواستوں کی سماعت کے لیے نئے لارجر بینچ کا اعلان کیا تھا۔

جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں 5 رکنی بینچ 4 جنوری سے درخواستوں کی سماعت کا آغاز کرے گا جبکہ نئے چیف جسٹس 5 رکنی لارجر بینچ کا حصہ نہیں ہوں گے۔

01010-03-panama-03jan17سابق چیف جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی میں قائم سابقہ لارجر بینچ میں شامل جسٹس امیر ہانی مسلم بھی نئے لارجر بینچ کا حصہ نہیں ہیں۔

واضح رہے کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی)،جماعت اسلامی پاکستان (جے آئی پی)، عوامی مسلم لیگ (اے ایم ایل)، جمہوری وطن پارٹی (جے ڈبلیو پی) اور طارق اسد ایڈووکیٹ نے پاناما لیکس کی تحقیقات کے لیے سپریم کورٹ میں آئینی درخواستیں دائر کی تھیں۔

مزید پڑھیں: پی ٹی آئی کا پاناما کمیشن کے بائیکاٹ کا فیصلہ، سماعت ملتوی

20 اکتوبر کو ان درخواستوں پر سماعت کے بعد سپریم کورٹ نے وزیراعظم نواز شریف، وزیر خزانہ اسحٰق ڈار، وزیراعظم کی صاحبزادی مریم نواز، داماد کیپٹن (ر) صفدر، بیٹوں حسن نواز، حسین نواز، ڈی جی فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی اے)، چیئرمین فیڈرل بورڈ آف ریوینیو (ایف بی آر) اور اٹارنی جنرل سمیت تمام فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے کیس کی سماعت 2 ہفتوں کے لیے ملتوی کی تھی۔

01010-04-panama-03jan17جس کے بعد 28 اکتوبر کو سپریم کورٹ آف پاکستان نے پاناما لیکس پر درخواستوں کی سماعت کے لیے 5 رکنی لارجر بینچ تشکیل دیا تھا۔

9 دسمبر کو ہونے والی کیس کی آخری سماعت میں آئندہ سماعت کو جنوری کے پہلے ہفتے تک ملتوی کردیا گیا تھا، جس کے بعد سابق چیف جسٹس انورظہیرجمالی کی مدت ملازمت ختم ہونے کے باعث درخواستوں کی سماعت کرنے والا یہ لارجر بینچ ٹوٹ گیا تھا۔

آخری سماعت کے دوران چیف جسٹس انور ظہیر جمالی نے واضح کیا تھا کہ نئے بینچ کی تشکیل کے بعد کیس کی نئے سرے سے سماعت ہوگی اور وکلاء کو دوبارہ دلائل دینا ہوں گے۔

About admin

Check Also

کل بھوشن کی بیوی 2ماہ سے لا پتہ

پاکستان میں سزائے موت کے منتظر بھارتی خفیہ ادارے ’’را‘‘کے ایجنٹ کلبھوشن کی بیوی جسے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Translate »
error: Content is protected !!