پاکستان کا سیریز میں کامیابی کیلئے نیوزی لینڈ کو 280 رنز کا ہدف

0
436

پاکستان نے ایک روزہ سیریز کے فیصلہ کن میچ میں نیوزی لینڈ کے خلاف پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے بابراعظم کی اچھی بلےبازی کی بدولت 8 وکٹوں پر 279 رنز بنا لیے۔

دبئی انٹرنیشنل کرکٹ اسٹیڈیم میں کھیلے جارہے اس میچ میں پاکستان ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے ٹاس جیت کر پہلے خود بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور اوپنرز نے ایک اچھا آغاز فراہم کیا۔

گزشتہ میچ میں زخمی ہونے والے امام الحق کی عدم موجودگی میں فخرزمان کے ساتھ تجربہ کار بلے باز محمد حفیظ نے اوپننگ کی اور پہلی وکٹ کی شراکت میں 65 رنز بنائے۔

پاکستان کی جانب سے محمد حفیظ آؤٹ ہونے والے پہلے بلے باز تھے جنہوں نے 19 رنز بنائے۔

فخرزمان نے ایک مرتبہ پھر ذمہ دارانہ بلےبازی کا مظاہرہ کرتے ہوئے اسکور کو 98 رنز پہنچایا اور اپنی نصف سنچری بھی بنائی، وہ 23 اوورز میں 65 رنز بنا کر گرینڈ ہوم کی گیند پر آؤٹ ہوئے۔

حارث سہیل اور بابراعظم کی شراکت میں 108 رنز بنے اور اسی دوران دونوں بلےبازوں نے اپنی نصف سنچریاں بھی مکمل کی تاہم حارث سہیل 60 رنز بنا کر فرگوسن کی گیند پر آؤٹ ہوئے جس کے بعد شعیب ملک بیٹنگ کے لیے آئے اور 250 کے مجموعے پر صرف 18 رنز جوڑ کر ہینری کی وکٹ بن گئے۔

بابراعظم نے اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا لیکن وہ صرف 8 رنز کے فرق سے سنچری بنانے محروم ہو کر نروس نائٹی کا شکار ہوئے، انہوں نے 100 گیندوں کا سامنا کرتے ہوئے 4 چوکے اور ایک چھکے کی مدد سے 92 رنز بنائے۔

فہیم اشرف 5 اور حسن علی 2 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے جبکہ کپتان سرفراز احمد نے آؤٹ ہوئے بغیر 1 رن بنایا۔

پاکستان نے مقررہ اوورز میں 8 وکٹوں کے نقصان پر 279 رنز بنا لیے۔

نیوزی لینڈ کی جانب سے فرگوسن نے زبردست باؤلنگ کا مظاہرہ کیا اور 5 وکٹیں حاصل کیں۔

پاکستان ٹیم میں 2 تبدیلیاں کی گئی ہیں اور نوجوان اوپننگ بلے باز امام الحق کی جگہ حارث سہیل جبکہ آل راؤنڈر عماد وسیم کی جگہ آصف علی کو شامل کیا گیا ہے۔

نیوزی لینڈ کی ٹیم اپنے کپتان کین ولیم سن سے محروم ہے جو انجری کے باعث میچ کا حصہ نہیں، جبکہ ان کی جگہ ٹام لیتھام قیادت کے فرائض نبھارہے ہیں۔

پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان تین ایک روزہ میچوں پر مشتمل سیریز ایک ایک سے برابر ہے۔

پہلے میچ میں نیوزی لینڈ نے فاسٹ باؤلر ٹرینٹ بولٹ کی شاندار ہیٹ ٹرک کی بدولت پاکستان ٹیم کو باآسانی 47 رنز کی شکست سے دوچار کیا تھا۔

دوسرے میچ میں سرفراز الیون نے شانداہ کم بیک کرتے ہوئے مہمان ٹیم کو ہر شعبے میں آؤٹ کلاس کردیا اور 6 وکٹوں سے میچ جیت کر سیریز ایک ایک سے برابر کردی۔

خیال رہے کہ گزشتہ فتح پاکستان کی کیوی ٹیم کے خلاف ایک روزہ میچوں میں 12 مسلسل شکست کے بعد حاصل ہوئی۔

مزید پڑھیں: کیا نیوزی لینڈ نے منصوبہ بندی کے تحت حفیظ کو نشانہ بنایا؟

واضح رہے کہ پاکستان ٹیم گزشتہ 7 سال سے نیوزی لینڈ کے خلاف ون ڈے سیریز جیتنے میں ناکام رہی ہے۔

پاکستان ٹیم نے آخری مرتبہ شاہد آفریدی کی قیادت میں فروری 2011 میں نیوزی لینڈ کو ون ڈے سیریز میں شکست سے دوچار کیا تھا۔

مذکورہ سیریز کے بعد سے لے کر اب تک پاکستان اور نیوزی لینڈ 4 مرتبہ آمنے سامنے آچکے ہیں اور ہر مرتبہ صرف کیوی ٹیم ہی کامیاب رہی۔